Request callback

یبیرکہی کیوں؟

قابلِ بھروسہ , مؤثر , تجربہ کار

مؤثر

آپ کا تجربہ مشاورت کے مر حلے سے شہریت کے حصول تک بالکل ہموار اور شفاف رہے گا ہمارا کام کرنے کا انداز ہمیں اس قابل بناتا ہے کہ ہم تمام خدمات بروقت انجام دیں تا کہ آپ کو ایک آسان عمل کے ذریعے اپنی مرضی کی شہریت کے حصول میں آسانی ہو۔

Dark Cover

متعدد کنسلٹنٹس سے مشاورت کے بعد سرمایہ کاری کے ذریعے شہریت کے حصول کے لیے،میں اور میری بیوی نےیبیرککا انتخاب کیا انہوں نے ہماری اس صورتحال کو بخوبی سمجھا کہ ہم ایک جنگ زدہ ملک سے تعلق رکھتے ہیں اور محض18ہفتوں سے بھی کم عرصے میں ہمیں دوسرا پاسپورٹ حاصل کرنے میں مدد دی۔

ایکیبیرککلائنٹ

* رازداری کے سبب کلائنٹ کا نام صیغۂ راز میں رکھا گیا ہے

قابلِ بھروسہ

ہماری بین الاقومی سطح پر تسلیم شدہ ٹیم نے حکومتی اداروں کے ساتھ دیرینہ تعلقات استوار کرنے میں کئی دہائیاں صَرف کی ہیں۔ہم اس بات کو ہر ممکن طریقے سے یقینی بناتے ہیں کہ آپ کی درخواست درست ہاتھوں میں جائے اور اس پر بروقت کارروائی کی جائے۔

Dark Cover

ڈومنیکا کی شہریت کے حصول میں پانچ ماہ کا عرصہ لگا اور اس دورانیبیرکنے مجھے مکمل طور پرتمام تفصیلات سے آگاہ رکھا وہ ان تمام ممکنہ مشکلات سے آگاہ تھے جن کا مجھے اپنے حالات کے سبب سامنا کرنا پڑ سکتا تھا اور اس سلسلے میں مکمل راہنمائی کی۔ مجھے مکمل یقین ہے کہ یہ مرحلہ کسی اور کمپنی کے ساتھ اس طرح کسی دباؤ کے بغیر ممکن نہیں ہو سکتاتھا۔

ایکیبیرککلائنٹ

* رازداری کے سبب کلائنٹ کا نام صیغۂ راز میں رکھا گیا ہے

تجربہ کار

انویسٹمنٹ اسپشلائزیشن کے ذریعے شہریت کے لیے ہم ایک معروف نام رکھتے ہیں ہمارے گلوبل نیٹ ورک میں موجود پارٹنرز انڈسٹری کی بصیرت کو بروئے کار لاتے ہوئے ایسی تمام مشکلات کا حل ڈھونڈ نکالتے ہیں جو درپیش آسکتی ہیں۔

Case Studies

March 13, 2017

ڈومینیکا کی شہریت

سال2011میں موسمِ بہار کے بعد،مہدی نام کا ایک تیونسی ، اس کی بیوی مریم اور دو بچے ریان اور گھادا ،نے دوسرے پاسپورٹ کے لیے اپلائی کرنے کا فیصلہ کیا
اس نے اپنی مکمل زندگی ہوٹل سازی کے کاروبار میں گزاری تھی۔ملک میں سیاحت کے فروغ سے اس نے اپنے کاروبار میں بہت ترقی کی تھی۔
سال2011کے اختتام تک صورتحال میں کافی تبدیلی واقع ہوئی، جس سے مالی مشکلات میں اضافہ ہوا اور سیاحت کے نرخوں میں کمی واقع ہوئی۔
مہدی اور اس کے خاندان کے لیے دوسرے پاسپورٹ کے حصول سے ممکن ہوا کہ وہ اپنے ملک سے نکل کر دوسرے ملک میں جائیں اور تحفظ تلاش کر سکیں۔

March 10, 2017

سینٹ کِٹس اور نیوس کی شہریت

بیرونِ ملک بہترین یونیورسٹی سے اعلیٰ تعلیم کے حصول کے بعد لی ژوئی یِنگ نے فیصلہ کیا کہ اسے اپنا کاروبار دوسرے ممالک میں بھی بڑھانا چاہئے
اس سلسلے میں اسے مختلف ممالک کا دورہ کرنا پڑتا لیکن چینی پاسپورٹ کے سبب اسے بہت سارے مقامات پر آن ارائیول ویزا کی سہولت دستیاب نہیں تھی۔
لی ژوئی یِنگ کو دوہری شہریت کے حصول سے اپنے کیریئر میں بہت سے مواقع میسر آئے اور اب وہ دنیا کے بہت سے ممالک میں آسانی کے ساتھ سفر کر سکتی ہے۔

March 1, 2017

سینٹ لوسیا کی شہریت

مشرقِ وسطی کی یونیورسٹی میں عربی کے پروفیسر کی حیثیت سے خدمات انجام دینے کے سبب باسل پندرہ سال سے اپنے آبائی وطن شام سے باہر رہ رہا تھا۔
اسے اپنے کام کے سلسلے میں اور خاندان سے ملنے کے لیے اکثر سفر کرنا پڑتا تھا
وہ باقاعدگی سے جرمنی اور نیدرلینڈ بھی جاتا تھا جہاں اس کی بیٹی شیمابرطانیہ کی ایک یونیورسٹی میں زیرِِ تعلیم تھی۔
تاہم پاسپورٹ کی میعاد پوری ہونے پر اسے نیا پاسپورٹ درکار ہوتا تھا جو کہ ملکِ شام میں ایک آسان کام نہیں تھا
نئے پاسپورٹ کے حصول کے بعد اسے سفر کے سلسلے میں بہت سی پابندیوں کا سامنا بھی کرنا پڑا
لہذا باسل نے فیصلہ کیا کہ وہ سینٹ لوئس کی شہریت میں سرمایہ کاری کرے گا تا کہ اسے ایک بار پھر سفر میں آسانی ہو سکے۔

ہمارے پروگرامز

ہماری جانب سے پیش کیے جانے والے پروگرامز کے بارے میں مزید جانیں،ہر ملک کی جانب سے پیش کردہ فوائد اور درکار سرمایہ کاریوں کاآپس میں موازنہ کریں ۔

Request a callback